حکومت بلوچستان کی ایما پر اسٹنٹ کمشنر گوادر نے پرامن احتجاج کو سبوتار کرنے کی کوشش کی ڈاکٹرعبدالمالک بلوچ..

Spread the love

نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر سابق وزیر اعلی بلوچستان ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ اور مرکزی سیکریٹری جنرل جان محمد بلیدی نے کہاکہ حکومت بلوچستان کی ایما پر اسٹنٹ کمشنر گوادر نے پرامن احتجاج کو سبوتاژ کرنے کی کوشش کی اور مرکزی رہنما میر اشرف حسین اور دیگر کارکنوں پر تشدد کیا انھوں نے کھاکہ نیشنل پارٹی کا غیر قانونی مائیگیری اور گوادر کے عوام کو پانی اور بجلی کی فراہمی کے لیے احتجاج اور ہڑتال کی کال دی تھی لیکن اسٹنٹ کمشنر گوادر نے اپنے اختیارات سے تجاوز کرتے ہوئے پولیس کے ایریا میں مداخلت کرکے پرامن سیاسی و جمہوری احتجاج پر تشدد کیا کارکنوں اور رہنما پر تشدد کیا اور لاٹھی چارج کی جس کی شدید الفاظ میں مزمت کرتے ہیں انھوں نے کہا کہ بلوچستان میں غیرملکی ٹرالرز کو مائیگیری کا پرمیشن دے کر وفاقی و صوبائی حکومتیوں نے ساحل بلوچستان پر آباد لوگوں سے روزگار کا حق چینے کی ناپاک کوشش کی ہے جیسے نیشنل پارٹی کے کارکنوں نے ناکام بنایا ہے حکومت بلوچستان وفاق کے ساتھ اس عمل میں برابر کا شریک ہے اس لیے اس حوالے سے جاری احتجاجی تحریک کو طاقت کے ذریعے سبوتاژ کرنا چاہتا ہے انھوں نے کھاکہ اگر حکومت بلوچستان نے اسٹنٹ کمشنر گوادر کے خلاف قانونیکاروائی نہیں کی تو پارٹی اس سلسلے میں اپنے لاعمل کا اعلان کرے گا گوادر کے عوام اور سیاسی کارکنوں اور رہنماوں کو تنہاہ نہیں چھوڑیں گے بلوچستان بھر میں اس ناروا عمل کے خلاف بھر پور احتجاج کریں گے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے