بیسی مزدور دشمنی بند کرے علاج معالجہ مزدوروں اور ان کے خاندان کا قانونی حق ہے کم از کم اجرتوں کا سرکاری نوٹیفکیشن جاری کیا جائے اشیاء ضرورت کے نرخوں میں کمی کی جائے،رہنماوں کا خطاب

Spread the love

حب:(نامہ نگار)تفصیلات کے مطابق جمعرات کو نیشنل ٹریڈ یونین فیڈریشن اور دیگر مزدور یونینز کے زیر اہتمام مزدوروں کی احتجاجی ریلی نکالی گئی ریلی مین قومی شاہراہ پر گشت کرتی رہی جس کی قیادت فیڈریشن کے صدر رفیق بلوچ کررہے تھے احتجاجی مارچ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے حاجی محمد جمن، توفیق احمد، عبدالعزیز لاسی، نصیر احمد مینگل، شمیے سمین،امجد آمین،غلام مصطفی،جان محمد،حاجی حکیم،گلزار مری،طفیل،ابراہیم جتوئی،سید اسلام شاہ، عبدالغنی و دیگر نے کہا کہ ملک میں مزدوروں کے حالات کار اور اوقات کار مخدوش ہیں لیکن بلوچستان میں یہ صورتحال نہایت ہی خراب ہے محنت کشوں کی اکثریت لیبر قوانین کے تحت حاصل حقوق سے یکسر محروم رکھا گیا ہے وہ ادارے جو محنت کشوں کی جدوجہد اور قربانیوں کے نتیجے میں قائم کئے گئے ان پر افسر شاہی نے قبضہ جمالیا ہے یہ ادارے مزدوروں کے حقوق کا تحفظ اور ان کی فلاح و بہبود کیلئے کام کرنے کے بجائے اس کے خلاف کام کررہے ہیؑ اس کی بدترین مثال بلوچستان سوشل سیکورٹی انسٹیٹیوٹ (بیسی)ہے جس کے بعض آفیسرز اپنے غیر اخلاقی اقدامات سے ادارے اور مزدوروں کو ناقابل تلافی نقصان پہنچانے کے درپے ہیں مزدور رہنماؤں نے مزید کہا کہ بیسی کے ققانون کے تحت اس ادارے سے رجسٹرڈ مزدوروں اور ان کے خاندان کو علاج معالجہ اور دیگر سہولیات حاصل ہیں لیکن مزدور دشمن بیسی اہل کار مسلسل مزدوروں کیلئے مشکلات پیدا کررہے ہیں حالیہ دنوں ان قانون شکن آفیسرز نے مزدوروں کے بچوں کا بلا جواز علاج و معالجہ کی سہولت فراہم کرنے سے انکار کردیا ہے جو کہ ایک مجرمانہ فعل اور بیسی کے قانون کی کھلی خلاف ورزی ہے بیسی کے یہ راشی آفیسرز علاج و معالجہ سے متعلق سہولیات کے حصول کو پیچیدہ سے پیچیدہ تر بنا رہے ہیں جس کے نتیجے میں کوئی بھی سانحہ رونما ہوسکتا ہے جس کی برائے راست ذمہ داری ان آفیسرز اور ادارے پر عائد ہوگی اس بدترصورتحال کی وجہ سے مزدوروں میں شدید غم و غصہ پایا جاتا ہے جو کہ ایک بڑے احتجاج کی شکل اختیار کرسکتا ہے مزدور رہنماؤں نے اور کہا کہ ایسے وقت میں جب مہنگائی کا طوفان محنت کش کی زندگیوں میں زہر گھول رہا ہے بیسی کے صحت دشمن اقدامات جلتی پر تیل کاکام کررہے ہیں انہوں نے بیسی کے ناعاقبت اندیش آفیسرز کو متنبہ کیا کہ وہ اپنی مزدور دشمن روش ترک کردیں ورنہ مزدور اپنے حقوق کے تحفظ کیلئے راست قدم اٹھانے میں حق بجانب ہونگے مزدور احتجاج مارچ میں مطالبہ کیا گیا کہ بیسی محنت کشوں کو علاج و معالجہ اور دیگر سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنائے علاج و معالجہ کے طریقے کار کو سہل اور مزدور دوست بنائے مزدوروں کے بچوں کیلئے علاج و معالجہ کی سہولیات بند کرنے کے سازش ختم کی جائے کم از کم اجرتوں کے سرکاری اعلان کا نوٹیفکیشن فی الفور جاری کیا جائے آٹا،چینی،تیل، دال، چاول،ادویات،بجلی، گیس ،پیٹرول مصنوعات اور دیگر ضروریات زندگی کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ واپس لیا جائے بین الاقوامی مالیاتی اداروں کی ایما پر جاری محنت کش دشمن معاشی پالیسیاں ترک کی جائیں.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے