معروف پاکستانی ایٹمی سائنسدان ڈاکٹر عبدالقدیر خان انتقال کر گئے ،ان کی زندگی پر ایک نظر

Spread the love

اسلام آباد ،تفصیلات کے مطابق پاکستان کے مشہور و معروف ایٹمی سائنسدان ڈاکٹر عبدالقدیر خان خالق حقیقی سے جاملے جن کی نماز جنازہ ان کی وصیت کے مطابق آج فیصل مسجد اسلام آباد میں ادا کی جائے گی ڈاکٹر عبدالقدیر خان کو پھیپھڑوں کا عارضہ میں مبتلا تھے جن کو آج شدید تکلیف کے باعث انہیں صبح 6 بجے کے قریب کے آر ایل ہسپتال لایا گیا جہاں ڈاکٹروں نے ایٹمی سائنسدان کو بچانے کی پوری کوشش کی تاہم وہ جانبر نہ ہو سکے اور صبح 7 بج کر 4 منٹ پر ان کا انتقال ہوگیا

ڈاکٹر عبدالقدیر کی زند گی پر ایک نظر
ڈاکٹر عبدلقدیر ہندوستان کے شہر بھوپال میں 1936ء میں پیدا ہوئے قیام پاکستان کے بعد 1952ء میں وہ کراچی منتقل ہو گئے 1960ء میں انھوں نے کراچی یونیورسٹی سے میٹالرجی میں ڈگری حاصل کی جنکہ انھوں نے جرمنی اور ہالینڈ سے بھی اعلیٰ تعلیم حاصل کی 1967میں ہالینڈ سے میٹالرجی میں ماسٹراور 1972 میں بیلجیم سے پی ایچ ڈی کی ڈگری حاصل کی جس کے وہ 1976ء میں واپس پاکستان آگئے ڈاکٹ عبدالقدیر نے سابق وزیر اعظم ذوالفقار علی بھٹو کی دعوت پر’انجینئری ریسرچ لیبارٹریز‘ کے پاکستانی ایٹمی پروگرام میں حصہ لیا بعد ازاں صدر پاکستان جنرل محمد ضیاء الحق نے یکم مئی 1981ء کو اس ادارے کا نام تبدیل کرکے ڈاکٹر اے کیو خان ریسرچ لیبارٹریز رکھ دیا ڈاکٹر عبدالقدیر خان نے 8 سال کے انتہائی قلیل عرصہ میں انتھک محنت اور لگن کی ساتھ ایٹمی پلانٹ نصب کرکے دنیا کے نامور نوبل انعام یافتہ سائنس دانوں کو حیرت میں ڈال دیا ڈاکٹرعبد القدیر خان نے نومبر 2000ء میں ککسٹ نامی درسگاہ کی بنیاد رکھی انہیں محسن پاکستان کا بھی خطاب دیا گیا جبکہ ان کو 3 صدارتی ایوارڈز سے بھی نوازا گیا اس کے علاوہ انھیں دو بار نشان امتیاز اور ہلال امتیاز سے بھی نوازا گیا

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے