بلوچستان حکومت حالات کو کنٹرول کرنے میں بالکل ناکام ہوچکی ہے, میر اکرم بلوچ آوارانی

Spread the love

پاک سرزمین پارٹی مرکزی سینئر رہنما میر اکرم بلوچ آوارانی نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اس حکومت میں بلوچستان کے حالات دن بدن خراب ہوتے جا رہے ہیں بلوچستان حکومت حالات کو کنٹرول کرنے میں بالکل ناکام ہوچکی ہے صوبہ بلوچستان میں امن قائم کرنے کے لیے پاک فوج کے ادارے اپنا کردار ادا کر رہے ہیں لیکن موجودہ سیاسی لیڈران کی عدم توجہ کی وجہ سے عوامی مسائل حل نہیں ہو پاتے پانی بجلی سڑکوں صحت جیسے بنیادی سہولیات سے عوام کو محروم رکھا گیا ہے یقینا سہولیات نہ ملنے کی وجہ سے لوگ بدگمان ہوتے ہیں صوبے کی عوام دو وقت کی روٹی کے لیے محتاج ہے صوبہ بلوچستان میں روزگار نہ ہونے کے برابر وزیر اعلی بلوچستان کے اپنے حلقے آواران کی عوام پانی پینے کے لئے ترس رہی ہیں وہ وزیر اعلی جیٹ طیارے گفٹ کر رہے ہیں بڑی افسوس کی بات ہے آپ کو اتنی دلچسپی تھی تو آپ اپنے زیادتی اخراجات سے انہیں گفٹ دیتے بلوچستان کے عوام کے خون پسینے کی کمائی کے پیسے کو اس طرح گفٹ نہیں کرتے جس کی ہم سراسر مذمت کرتے ہیں ضلع آواران میں اربوں روپے کی کرپشن کرکے ملائیشیا میں اور دیگر بیرونی ملک اور پاکستان میں ان کے کاروبار چھائے ہوئے ہیں اتنے اربوں روپے کے جائیدادیں کہاں سے بنائی گئی ہیں پچھلے 40 سالوں میں ضلع آواران میں ان کے ترقیاتی کام عوام کو تو نظر ہی نہیں آتے پاک سرزمین پارٹی کے مرکزی سینئر رہنما میرا کرم بلوچ آوارانی نے مزید کہا کہ ضلع آواران کے عوام کو ہم تنہا نہیں چھوڑیں گے انشاءاللہ وہ دن عنقریب ہے جب ضلع آواران کی عوام ان کرپٹ اور لٹیروں کو ریجکٹ کر کے آنے والے الیکشن میں اپنے لئے ایک سچے محنت کش لیڈر کا انتخاب کریں گے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے