آئندہ جنرل الیکشن میں بدترین شکست کے چیلنج نے عبدالقدوس بزنجو کو آواران یاد کروا دیا! میر اکرم بلوچ آوارانی

Spread the love

پاک سر زمین پارٹی کے مرکزی سینئر رہنما میر اکرم بلوچ آوارانی نے اپنے بیان میں کہا کہ عبدالقدوس بزنجو کا دو روزہ دورا آواران بدترین ناکامی کی نظر ہو گیا آواران کی سیاسی شخصیات،میر معتبرین سرداران و غیور عوام کا مشکور ہوں جنہوں نے میری کال پر عبدالقدوس بزنجو کے دورہ آواران کا بائیکاٹ کیا میر اکرم بلوچ آوارانی کا کہنا تھا کہ آواران کے میر معتبرین سرداران اعلی شخصیات و غیور عوام کے بائیکاٹ نے آواران کے پٹواریوں کی دوڑیں لگا دیں جنہوں نے لوکل سرکاری اہلکاروں کو اکٹھا کیاافسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ ایک معصوم بچے نے پھولوں کا ایک خوبصورت گلدستہ وزیراعلیٰ کو پیش کیا اور وزیراعلیٰ نے اس بچے کو صرف پانچ سو روپے دئے وفاقی حکومت کی طرف سے ملنے والے حکومت بلوچستان کو 10 ارب کہاں گئے اس میں سے دو ارب کا پیکج پسماندہ ترین آواران کا حق تھا مگر افسوس کے دس ہزار بھی وزیر اعلیٰ نے آواران کو دینا گوارا نہ کیا اور صرف پانچ سو بچے کو دے کر غریبوں کی غربت کا مزاق اڑایا گیا میراکرم بلوچ آوارانی کا مزید کہنا تھا آواران کی عوام نے وزیراعلیٰ کے اعلانات کو سہانے خواب اور ٹرک کی بتی کے پیچھے لگانے کے مترادف قرار دے دیا ہے 1992 ڈگری کالج آواران چیف آف آرمی اسٹاف جناب قمر جاوید باجوہ کے مرحون منت آیا میر اکرم بلوچ آوارانی کا مزید کہنا تھا کہ آواران کے میر معتبرین عمائدین اعلی شخصیات اور غیور عوام نے عبدالقدوس بزنجو کو یہ واضح پیغام دیا ہے کہ اب ہم چند دن کے محمان وزیراعلیٰ عبدالقدوس بزنجو کے جھانسے میں آنے والے نہیں عوام میں شعور اجاگر ہو چکا ہے اب یہ ٹرک کی بتی کے پیچھے لگانے والی کہانی پرانی ہو چکی ہے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے