خود خو ذہنی تنائو (mental stress) سےبچانے کے آسان طریقے

Spread the love

آج کل کی تیز رفتار زندگی میں میں تقریبا ہر شخص زہنی تنا و کا شکار رہتا ہے لیکن یہ تناؤ کسی میں زیا دہ تو کسی میں کم ہوتا ہے یہاں تک کہ بچوں میں بھی اس کی علامات کو دیکھا جاسکتا ہے۔جس کی وجہ کچھ بھی ہوسکتی ہے ماہرین کے مطابق ویسے تو معمولی تناؤ نقصان دہ نہیں بلکہ انسان کو حالات سے مقابلہ کرنے میں مدد فراہم کرتا ہے، مگر بہت زیادہ تناؤ شخصیت پر جسمانی اور ذہنی اعتبار سے منفی اثرات مرتب کرسکتا ہے بلکہ مختلف امراض کا شکار بھی کرسکتا ہے
ماہرین کے مطابق نمک کا زیادہ استعمال بھی مایوسی یا تناؤ بڑھانے کا باعث بن سکتا ہے۔نمک کے زیادہ استعمال سے جسم میں پانی جمع ہونے لگتا ہے جو بلڈ پریشر میں اضافے کا باعث بنتا ہے جو براہ راست مزاج پر منفی اثرات مرتب کرتا ہے اس لیے نمک کے استعما ل میں کمی کریں


جب آپ کو لگے کے آپ ا چڑچڑیہ ہو رہے ہیں جس سے آپ کسی سے لڑ سکتے ہیں، تو اس کا آسان حل ایک یا 2 منزلیں سیڑھیاں چڑھنا شروع کردیں اس بھی آپکا زہنی تناؤ میں کافی کمی آ ئگی زیادہ میٹھا کھا نے سے گریز کریں کیا اگر ہاں تو اس عادت سے گریز کریں کیونکہ اس سے تناؤ میں وقتی کمی تو آتی ہے مگر پھر خون میں گلوکوز کی سطح کم ہونے پر ایک بار پھر مزاج پر منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں، جبکہ جسمانی وزن میں بھی اضافہ ہوتا ہیذہنی تناؤ کو سب سے زیادہ کنٹرول کر نے میں نیند بہت اہم ہے نیند کی کمی سے صحت کے متعدد پہلو متاثر ہوتے ہیں جن میں سے ایک ذہنی صحت بھی ہے، اس کے مقابلے 7 سے 8 گھنٹے کی نیند سے تناؤ کم ہوتا ہے۔کئی بار زندگی کے ایک جیسے معمولات بھی تناؤ کا باعث بنتے ہیں تو ناشتے میں کسی نئی غذا کو آزمانا، کسی نئے راستے پر گھومنے یا اپنے دفتر جانے کا راستہ بدل دینا بھی مزاج کو خوشگوار بناسکتا ہیورزش بھی آپکے تناؤ میں کمی لانے میں کافی کار آمد ثاؓت ہو سکتی ہے اگرآپ کے پاس جم میں جانے کا وقت نہیں؟ تو جسم کو کچھ حد یعنی چہل قدمی بھی ذہن کو صاف رکھنے میں مدد فراہم کرتی ہے کھا نے میں فائبر سے بھرپور غذاؤں کا استعمال قبض کی روک تھام کرتا ہے اور دل کی صحت بہتر بناتا ہے مگر اس کے ساتھ ساتھ تناؤ کی سطح بھی کم کرتا ہے اس لیے غذ امیں فائبر والی غزاؤں کا استعمال زیادہ کریں


جو کا دلیہ، اسٹرابیری، مالٹے اور دیگر متعدد پھلوں اور سبزیوں میں فائبر کی مقدار کافی زیادہ ہوتی ہے۔اگر آپ ہمیشہ ماضی یا مستقبل کے بارے میں سوچتے رہتے ہیں تو یہ عادت بھی تناؤ بڑھانے کا باعث بنتی ہے، اس کے مقابلے میں حال پر توجہ مرکوز کرنے سے تناؤ میں کمی لانا آسان ہوجاتا ہیذہن میں بہت زیادہ خیالات گردش کررہے ہیں؟ تو دماغ کو اس سے بچانے کے لیے کراس ورڈ پزل حل کریں، مطالعہ کریں یا کوئی ایسا نیا مشغلہ اپنا لیں جو ذہن کے لیے فائدہ مند ہو، کچھ نہیں تو کسی سرسبز مقام پر کچھ وقت گزار لیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے